×

موسیقی انسانی صحت کے لیے خطرناک

تم گانے سنتی ہو ؟
میں نے پیچھے مڑ کر دیکھا تو کلاس کی لڑکی مجھ سے مخاطب تھی .
نہیں میں نہیں سنتی!
کیوں؟
میں نے کہا اسکے نقصانات کا تمہیں اسلام کی رو سے بتاؤں یا گورے چمڑی (اصلی لبرل)والوں کی رو سے بتاؤں ؟
کہنے لگی ہاں ہاں تم مولویوں کی وہی بات ہوگی کہ
“پگھلا ہوا سیسہ کانوں میں ڈالا جائے گا” .بھلا یہ بھی کوئی بات ہے؟
میں نے جواباً کہا:
گورے چمڑی والے کہتے ہیں کہ گانے زیادہ سننے سے آپکی “thinking ability ” کمزور ہو جاتی ہے . کبھی غور کیا ہو جب بھی انسان گانے سنتا ہے تو وہ ایک “imaginary”خیالی دنیا میں چلا جاتا ہے جس کا long term یہ نقصان ہوتا ہے کے انسانی دماغ میں ” limbic center”(انسانی دماغ کا وہ حصّہ جہاں long term میموری پڑی ہوتی ہے ) کمزور ہو جاتی ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ سوچنے اور یاد کرنے کی صلاحیت کمزور ہو جاتی ہے. بلکل اسی طرح گانے آپکو جنسی اشتعال بھی دلاتے ہیں. گوگل پر آپکو اسکی لسٹ مل جائے گی کے کس گانے میں کتنا sexual instrument استعمال ہوا ہے . مثلاً hip hop music میں 145% sexual instrument استعمال ہوتا ہے..
کہنے لگی واو، تماری لاجک تو بہت اچھی ہے..
میں نے کہا میری لاجک اچھی نہیں ہے تم ذہنی طور پر انگریزوں کی غلام ہو. بات میرے نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی آئی تو تم نے مجھے مولوی کا طعنہ دیا اب انگریز کی بات آئی تو میری لاجک اچھی ہو گئی ؟
ویسے بھی جن تعلیمی اداروں میں ناچ گانوں اور موسیقی کی تربیت دی جاتی ہو وہاں ایکٹرز اور سنگرز پیدا ہوتے ہیں نہ کہ رابعہ بصری اور صلاح الدین ایوبی رحمہ اللہ
جديد میڈیکل سائنس بھی اس نتیجے پر پہنچی ھے کہ میوزک سننے سے. آئ کیو. لیول کم ہو جاتا ہے اور حافظہ بھی کمزور ہوتا ہے..
اگر آج کوئی اپنے کانوں کو میوزک اور گانوں سے بچائے گا تو عنقریب میرا اللہ اسے مرتے ہی جب جنت میں بھیجے گا تو وہاں حوروں کےنغمے سنے گا.. پھر پیارے آقا صل اللہ علیہ والہ وسلم کی زبان مبارک سے قرآن سنے گا.. پھر سب سے بڑھ کر اللہ رب العزت کی آواز میں سورہ رحمان سنے گا ان شاء اللہ..
اللہ پاک ھمیں اپنے تمام اعضاء اور خاص طور پر کانوں کی حفاظت کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین
*_اردو کی بہترین تحاریر_*
_

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

موسیقی انسانی صحت کے لیے خطرناک” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں