سپیڈ بریکر ؛ گاڑیوں کا بیڑہ غرق کرنے والی کیٹ آئیز

[pl_row]
[pl_col col=12]
[pl_text]

سپیڈ بریکر ؛ گاڑیوں کا بیڑہ غرق کرنے والی کیٹ آئیز

گورے بلّی کی آنکھوں سے منعکس ہونے والی روشنیوں سے بٌہت متاثر تھے۔ انہی دنوں سڑکوں پہ نئی نئی چلنے والی گاڑیوں کے لئے رات کے وقت سڑک کی حدود کا تعین کرنا ایک مشکل ترین کام تھا۔ سو ایک گورے نے بلّی کی آنکھوں سے انسپریشن لے کر سٹیل کے ٹکڑے سڑک کے کناروں پہ استعمال کرنے شروع کردئیے جنہیں اس نے کیٹ آئیز کا نام دیا۔

پوری دنیا میں یہ کیٹ آئی سڑک کی حدود کے تعین کے لئے استعمال ہوتی ہیں لیکن چونکہ مملکت خداداد میں ہر چیز ہی الٹ ہے سو یہاں یہ کیٹ آئز بھی سڑک کی حدود کے تعین کے علاوہ بطور سپیڈ بریکر استعمال ہو رہی ہیں۔

ان کو بطور سپیڈ بریکر استعمال کرنے سے جہاں انجن کا بیڑہ غرق ہوتا ہے تو وہیں ٹائروں کی عمر بھی کم ہوجاتی ہے۔ ایک گاڑی جونہی اس کیٹ آئی سے گزرتی ہے تو ایک الارمنگ جمپ لگتا ہے، جو باقی کی دنیا میں تو یہ بتاتا ہے کہ سڑک ختم ہوچکی ہے مگر یہاں یہ بتاتا ہے کہ یہ ایک سپیڈ بریکر تھا۔ اس یکدم سے لگنے والے جمپ کی وجہ سے ٹائروں سے لیکر گاڑی کے شاکس تک اور شاکس لیکر انجن کی بنیادوں تک سب کچھ ہل کررہ جاتا ہے۔ اور یوں یہ کیٹ آئیز گاڑیوں کی تباہی کا باعث بن رہی ہیں۔

جبکہ اسکے مقابلے میں اصل سپیڈ بریکر اتنے سموتھ ہوتے ہیں کہ انکے اوپر سے اگر گاڑی خدانخواستہ تیز رفتار میں بھی گزر جاۓ تو تب بھی کوئی اتنا آفٹر شاک محسوس نہیں ہوتا جتنا ان کیٹ آئیز والے سپیڈ بریکروں سے گاڑی صفر کی رفتار پہ بھی گزارنے پہ محسوس ہوتا ہے۔ اور یہ ایک ظلم ہے ، جس کی وجہ سے عام صارف کی گاڑی کا نقصان ہورہا ہے۔ مگر سب خاموش اس کو سہہ رہے ہیں، یہی فرق ہے ہم میں اور گوروں میں ، ایک نے بلّی کی آنکھوں سے متاثر ہوکر سڑک کی حدود بتانے والی ڈیوائس بنا لی تو وہیں ہم نے اس جان بچانے والی ڈیوائس کو گاڑیوں کے انجن تباہ کرنے کے لئے استعمال کرنا شروع کردیا۔

تحریر ضیغم قدیر

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *