ٹرمپ کی ہار اور جوبائیڈن کی جیت پر ایران کا ناقابل یقین رد عمل سامنے آگیا –

” >
واشنگٹن (ویب ڈیسک) ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ کے مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے گیارہ بجے فلاڈیلفیا میں پریس کانفرنس کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم بائیڈن کی کامیابی کے کچھ ہی گھنٹوں میں شاید انھوں نے اپنا یہ ارداہ بدل لیا اور توقع نہیں کی جا رہی کہ وہ اب تقریر کریں گے۔

تاہم ٹوئٹر پر اب سے تھوڑی دیر قبل انھوں نے اپنی ٹویٹس میں ایک بار پھر بغیر کسی ثبوت کے صدارتی انتخاب میں دھاندلی کا الزام عائد کیا ہے۔گذشتہ کچھ دنوں میں ٹرمپ بغیر کوئی ثبوت پیش کیے بغیر کئی بار صدارتی انتخاب میں بے ضابطگیوں کے الزام عائد کر چکے ہیں۔اب ان کی انتخابی دفتر نے ایریزونا میں ایک اور مقدمہ دائر کر دیا ہے جس میں الیکشن کے روز ڈالے گئے ووٹوں کو غلط طریقے سے مسترد کرنے کا الزام لگایا گیا ہے۔ایران کے ٹی وی چینلز نے جو بائیڈن کی فتح پر کوئی اہم تبصرہ نہیں کیا، جو ایران کے اس دعوے کا عکاس ہے کہ ایران کو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ امریکہ کی قیادت کون کرتا ہے۔ایران کے رہبرِ اعلیٰ آیت اللہ علی خامنہ ای نے ایک ٹویٹ دوبارہ پوسٹ کی ہے، جو انھوں نے انتخابی دن پر شیئر کی تھی، جس میں انھوں نے اس دوڑ کو ’لبرل جمہوریت کا بدصورت چہرہ‘ قرار دیا تھا۔ایک ٹی وی چینل نے کچھ ایرانی لوگوں کی رائے لی جس میں یہی کہا گیا ہے کہ بائیڈن اور ٹرمپ کے مابین کوئی فرق نہیں اور ایرانیوں کو امریکی سیاستدانوں پر کوئی اعتماد نہیں رکھنا چاہیے بلکہ صرف اپنے آپ پر انحصار کرنا چاہیے۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *