سعودی ویزہ ہولڈرز کا ویزہ اور اقامہ ختم ہو گیا

پاکستان میں پھنسے سعودی ویزہ ہولڈرز کا ویزہ اور اقامہ ختم ہو گیا، ان کی واپسی کیسے ہوگی؟

جوازات کی ابشر اور مقیم سروسز سے ویزہ اور اقامہ کی تجدید کروائی جا سکتی ہے

ریاض( 4نومبر 2020ء) سعودی عرب میں لاکھوں پاکستانی مقیم ہیں ۔

جو ویزہ اور اقامہ کے حوالے سے مختلف مسائل کا سامنا کرتے ہیں۔کچھ ایسے لوگ بھی ہیں

 جو چھُٹی کے دوران پاکستان آئے مگر کورونا کی پابندیوں کی وجہ سے ان کی بروقت سعودیہ واپسی نہیں ہو سکی،

جس دوران ا ن کا اقامہ اور خروج وعودہ ختم ہو گیا ہے۔ ایسے لوگوں کے لیے جوازات کی جانب سے اہم اعلان کیا گیا ہے۔

ایک پاکستانی شہری احمد علی نے اُردو نیوز سے سوال کیا ہے کہ وہ سعودی عرب سے چھٹی پر پاکستان گیا

 مگر کورونا کی پابندیوں کی وجہ سے وقت پر واپسی نہیں ہو سکی اس دوران اس کا اقامہ اور خروج وعودہ بھی ختم ہو گیا ہے۔

اگرچہ سعودی حکومت کی جانب سے اقامہ اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع کر دی گئی تھی

 مگر فلائٹس نہ ہونے کی وجہ سے بھی اس کی واپسی نہیں ہو سکی۔

اس دوران اس کا اقامہ اور خروج وعودہ کی مدت ختم ہو چکی ہے۔ کفیل کی کوششوں کے باوجود اس کے اقامے کی تجدید نہیں ہو سکی۔

اس کی سعودیہ واپس کس طرح ممکن ہے۔ اس سوال کے جواب میں اسے بتایا گیا

 کہ سفری پابندیاں ختم ہونے کے ساتھ ہی حکومت کی جانب سے ایسے تارکین جو مملکت سے باہر تھے

 اور وہ اپنے وقت پر نہیں آسکے تھے ان کے لیے یہ سہولت فراہم کی کہ کفیل اپنے کارکنوں کے اقامے اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع کر لیں۔

 جوازات کی جانب سے ’ابشر‘ اور ’مقیم ‘ سسٹم میں خصوصی آپشن جاری کیا ہے جسے استعمال کرتے ہوئے غیرملکی کارکن جو مملکت سے باہر ہیں

کہ اقامہ اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع کی جا سکتی ہے۔ اقامہ کی تجدید مطلوبہ سالانہ فیس ادا کرنے کے

 بعد کی جاسکتی ہے جبکہ خروج عودہ کی مدت میں ایکسٹینشن ماہانہ بنیاد پر فیس اداکرنے کے بعد کرائی جا سکتی ہے۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Articles You May Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *