نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے پر غور

برطانیہ کا نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے پر غور

برطانوی محکمہ داخلہ نے نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے کی پاکستان کی درخواست پر جواب دیا ہے۔

وزیراعظم کے مشیر برائے امور داخلہ شہزاد اکبر کی گفتگو

اسلام آباد ( -04 نومبر ۔2020ء) وزیراعظم کے مشیر برائے امور داخلہ شہزاد اکبر کا کہنا ہے

 کہ برطانوی محکمہ داخلہ نے نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے کی پاکستان کی درخواست پر جواب دیا ہے۔

جنگ اخبار کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے بتایا کہ برطانوی محکمہ داخلہ نے انہیں بتایا ہے

کہ لندن اسلام آباد کی درخواست پر غور کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریری طور پر لندن سے کچھ موصول نہیں ہوا لیکن وہ برطانیہ میں حکام کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حال ہی میں حکومت پاکستان کی طرف سے برطانیہ کو خط لکھ کر نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے کی درخواست کی تھی

 تاکہ وہ اپنی سزا کا باقی ماندہ حصہ پاکستان کی جیل میں گزاریں۔

حکام کی رائے ہے کہ نواز شریف کے ویزے کی معیاد رواں ماہ ختم ہو جائے گی۔

نواز شریف کو ڈی پورٹ کرنے کی درخواست ان کی سزا کو دیکھ کر کی گئی ہے۔

کیونکہ یہ ڈی پورٹ کرنے کے لیے ایک موزوں کیس ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ماضی میں بھی مجرموں کو ڈی پورٹ کرتے رہے ہیں

اور نواز شریف کے کیس میں بھی ایسا کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف پہلے چھ ماہ کے وزٹ ویزے پر گئے تھے

 جس میں بعد میں توسیع کی گئی۔شہزاد اکبر نے کہا کہ برطانیہ نواز شریف کو دی پورٹ کرنے پر غور کر رہا ہے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کی کہ نواز شریف کو وطن واپس لانے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Articles You May Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *