پاکستان آج ورلڈکپ میں بقاء کی جنگ لڑے گا

لندن:(آسٹریلین اردو ٹی وی) لارڈز کے تاریخی گراؤنڈ میں پاکستان آج جنوبی افریقا کے خلاف ٹورنامنٹ میں بقاء کی جنگ لڑے گا۔ میچ پاکستانی وقت کے مطابق دوپہر 2 بج کر 30 منٹ پر شروع ہوگا۔

میگا ایونٹ میں قومی کرکٹ ٹیم اب تک 5 میچز کھیل چکی ہے جس میں سے ایک میں کامیابی، 3 میں شکست اور ایک میچ بارش کی نذر ہوا جب کہ پوائنٹس ٹیبل پر پاکستانی ٹیم 3 پوائنٹس کے ساتھ نویں نمبر پر ہے۔

جبکہ جنوبی افریقا کی ٹیم میگا ایونٹ میں 6 میچز میں سے ایک میں کامیابی حاصل کرسکی ہے، 4 میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا جب کہ ایک میچ بارش کے باعث نہ ہوسکا، پروٹیز پوائنٹس ٹیبل پر 3 پوائنٹس کے ساتھ 8 ویں نمبر پر موجود ہیں۔

ٹیم کے سیمی فائنل کھیلنے کے امکانات اب بھی روشن ہیں۔ اگرٹیم اپنے بقایا تمام 4 میچز جیتے، انگلینڈ تین میں سے 2 میچز اور سری لنکن ٹیم تین میں سے ایک میچ ہارے تو قومی ٹیم آسانی سے سیمی فائنل میں پہنچ سکتی ہے۔ قومی ٹیم کے جنوبی افریقا، نیوزی لینڈ، افغانستان اور بنگلادیش کے خلاف میچز کھیلنا ابھی باقی ہیں۔

جنوبی افریقا کے خلاف میچ میں حسن علی اور شعیب ملک کا ڈراپ ہونا یقینی ہے اور ان کی جگہ حارث سہیل اور شاہین شاہ آفریدی کو شامل کیے جانے کا امکان ہے۔

سیمی فائنل کھیلنے کیلئے کسی بھی ٹیم کو کم از کم 11 پوائنٹس حاصل کرنا ضروری ہیں، اس اعتبار سے اگر پاکستان ٹیم اپنے آئندہ کے چاروں میچز جیت لیتی ہے تو مطلوبہ نمبر حاصل ہوجاتا ہے۔

انگلینڈ کے آئندہ میچز آسٹریلیا، انڈیا اور نیوزی لینڈ کے خلاف ہیں،اگرانگلینڈ دو میچز جیت لیتی ہے تو پاکستان تمام میچز جیت کر بھی سیمی فائنل میں جگہ نہیں بناسکتا۔ اسی طرح سری لنکا کو سیمی فائنل کھیلنے کے لیے اپنے تمام میچز جیتنا ہوں گے، کسی ایک میں ناکامی اسے ورلڈکپ سے باہر کر سکتی ہے۔ (یہ اس صورت میں کہ پاکستان اپنے تمام میچز جیت لے)۔

اگر بنگلادیش تینوں میچز جیت جاتا ہےتو بنگلادیش سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کرجائے گا۔ اگر پاکستان اپنے چاروں میچز جیت لیتا ہے تو اس صورت میں ویسٹ انڈیز اور جنوبی افریقا کی ٹیمیں اپنے بقایا 3،3 میچز جیت بھی لیں تو وہ سیمی فائنل میں جگہ نہیں بناسکتے۔

بھارت کیخلاف پاکستان ٹیم کی مایوس کن کارکردگی اورشکست کے بعد کھلاڑیوں کو انگلینڈ میں پاکستان مداحوں کی جانب سے طعنوں اور جملے بازی کا سامنا ہے۔

اس ساری صورتحال میں ٹیم انتظامیہ نے کھلاڑیوں کو اپنی سرگرمیاں محدود کرنے اور ضروری کام کی صورت میں سیکیورٹی اہلکاروں کے ہمراہ ہوٹل سے باہر جانے کی ہدایت کی ہے۔ 

لارڈز میں پریکٹس سیشن کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ کرکٹ پر بات کریں تو کسی کو برا نہیں لگتا لیکن گالیاں کسی کو پسند نہیں اور ایسا ہونا ٹھیک بھی نہیں ہے۔

دوسری جانب پاکستانی ٹیم کے منیجر طلعت علی نے انکشاف کیا ہے کہ سرفراز احمد کو برا بھلا کہنے والے پاکستانی لڑکے کے خلاف کارروائی کیلئے آئی سی سی سے رابطہ کرلیا گیا ہے۔

دوستوں سے شیئر کریں

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

تبصرہ کریں