مسجدالحرام کےبارےمیں دلچسپ معلومات

 

مسجد الحرام

 

 

مسجد

 

جو ایک ملین مربع میٹر پر مشتل ہے۔

جہاں دو ملین لوگ سما سکتے ہیں۔

سالانہ 20 ملین لوگ وہاں جاتے ہیں۔

یہ جگھ کبھی بند نہیں ہوتی، 24 گھنٹے تک کھلی رہتی ہے چار ہزار سال سے۔

 

وہاں صفائی کس طرح؟ کس انداز سے کی جاتی ہے؟

 

کس طرح اس جگھ کو صاف کیا جاتا ہے؟ جہاں لاکھوں لوگ جاتے ہیں؟ جہاں ہر وقت لوگ ہوتے ہیں؟

دنیا میں تقریبا ہر جگھ کو تب ہی صاف کیا جاتا ہے جب وہ جگھائیں خالی ہوتی ہیں، جب وہاں کوئی نہیں ہوتا۔

مگر اس جگھ کو کس طرح صاف کریں

جو 24 گھنٹے لوگوں سے بھری ہوئی ہوتی ہے؟

 

اگر آپ کو کبھی یہ شرف حاصل ہو کہ آپ بھی مکہ پاک جاکر وہاں حرم شریف میں مطاف کی جگھ صاف کریں تو آپ کو وہاں ایک ایک بات تفصیل سے بتائی جائے گی کہ کس طرح آپ جھاڑو وغیرہ کو پکڑیں گے؟ کس طرح اسے دائیں ہاتھ سے پکڑنا ہے اور کس طرح اسے بائیں ہاتھ سے پکڑنا ہے؟ اور کس طرح لائن میں سب کے ساتھ بھاگتے ہوئے جلدی میں صاف کرنا ہے۔

یہ ٹی وی پر یا وڈیو میں دیکھنا آسان ہوتا ہے مگر وہاں ان صفائی کرنے والوں کے ساتھ بھاگتے ہوئے صفائی کرنا ہر کسی کی بس کی بات نہیں ہوتی۔

 

وہاں اگر صرف مطاف کو مطلب عمرہ کرنے والی جگھ کو صاف کرنے کے لئے، ہزاروں لوگوں کی موجودگی میں آپ کے پاس صرف اور صرف تیس منٹ ہوتے ہیں۔

اور دن میں اس جگھ کو چار بار صاف کیا جاتا ہے۔

اس جگھ کسی کیمیکل کا استعمال نہیں ہوتا بلکہ گلاب کے پانی کے ساتھ اور ایسا پانی ہوتا ہے جس سے کسی بھی شخص کو نہ کوئی خارش ہو اور نہ ہی کوئی تکلیف۔ جو بھی وہاں عمرہ کرتا ہے انہیں گلاب کی خوشبو آتی رہتی ہے۔

حرم پاک میں ایسی کوئی جگھ ہی نہیں جس کو صاف نہ کیا جاتا ہو۔

وہاں 1800 صفائی کرنے والے لوگ ہیں، چالیس صفائی کرنے والی گاڑیاں اور 60 صفائی کرنے والی مشینیوں کے ساتھ ساتھ دو ہزار کچرے ڈالنے والے ڈبے ہیں۔

حرم پاک کی زمین صاف کرتے ہیں

دروازے صاف کئے جاتے ہیں

حرم پاک کے اندر لگے مختلف کھمبے، منارے اور چھت بلکہ ہر چیز کی صفائی کی جاتی ہے۔

حرم پاک میں چالیس ہزار قالین ہیں۔

اگر انہیں ایک ساتھ لگائیں جائیں تو وہ مکہ پاک سے سعودیہ کے شہر جدہ تک کے پہنچیں گے مطلب کہ 79 کلو میٹر تک۔

مگر ان کو صاف کس طرح کیا جاتا ہے؟

سب سے پہلے قالین کو مٹی سے صاف کیا جاتا ہے

پھر اسے پانی سے صاف کیا جاتا ہے پھر صابن سے پھر دوبارہ پانی سے صاف کیا جاتا ہے۔

پھر اس قالین کو ایک خاص قسم کی مشین میں ڈالا جاتا ہے تاکہ وہ جلد سوکھ جائے جس کے بعد ان کو دوبارہ سے لٹکایا جاتا ہے تاکہ اور اچھی طرح  سوکھ جائیں۔

جس کہ بعد ان پر ایک اور بار مشین سے صاف کیا جاتا ہے  پھر انہیں پلاسٹک میں لپیٹ کر رکھ دیا جاتا ہے اور وقت آنے پر حرم پاک میں لایا جاتا ہے۔

جب انہیں حرم پاک میں بچھایا جاتا ہے تو اس پر گلاب کا پانی لگایا جاتا ہے تاکہ سجدہ کرتے وقت لوگوں کو گلاب کی خوشبو آئے۔

اس کی وجہ ہے کہ جب آپ سجدہ کریں تو آپ کو گلاب کی خوشبو آئے گی تو آپ کو اچھا لگے گا اور اگر سجدہ کرتے وقت کوئی بدبو آئے تو آپ سجدے سے جلدی سے اٹھ جائیں گے۔

 

اس لئے وہاں روزانہ قالینوں پر گلاب کا پانی لگایا جاتا ہے تاکہ لوگ سجدہ میں ہمیشہ خشوع میں ہوں۔

 

حرم پاک کی ہوا پر

خانہ کعبہ کے غلاف پر

حجر اسود پر

ہر جگھ پر خوشبو لگائی جاتی ہے۔

جس نے اس پوسٹ کا پہلا حصہ نہیں پڑھا تو پہلے وہ پڑھ لیں۔

 

مکہ پاک میں حرم پاک کے باہر 13 ہزار باتھ روم ہیں جن کو روزانہ چار بار صاف کیا جاتا ہے۔

اور یہ باتھ روم زمین کے اندر ہی بنائے گئے ہیں جہاں پنکھے بھی لگائے گئے ہیں اور مچھر، مکھی کو مارنے کا اچھا خاصا بندوبست بھی کیا گیا ہے۔ وہاں پر حال ہی میں ہر جگھ ایک ڈیوائس لگائی گئی ہے جس سے فائدے مند بیکٹیریا نکلتی ہے جو بدبو دار بیکٹیریا کو ختم کر دیتی ہے جس سے ایک اچھی خوشبو پیدا ہوتی ہے۔

 

حرم پاک میں ایسی کوئی جگھ ہی نہیں جہاں آپ کو زمزم کے پانی کا کولر نہ مل سکے، وہاں 25 ہزار زمزم کے پانی کے کولر رکھے گئے ہیں جن کو روزانہ دھویا جاتا ہے اور روزانہ زمزم کے پانی سے بھرا جاتا ہے۔ 

وہاں روزانہ 100 تک مختلف جگھاوںسے زمزم کے پانی کے نمونے لیبارٹری بھیجے جاتے ہیں تاکہ پانی کی سلامتی یا پانی کی صفائی کا خاص خیال

رکھا جائے۔

صرف اتنا نہیں بلکہ وہاں ایسے خاص لوگ بھی ہیں جو اپنی کمر پر ایک بیگ کی طرح زمزم کے پانی کا کولر رکھ کر طواف کرنے والوں کو زمزم کا پانی پینے کے لئے دیتے رہتے ہیں۔

 

اگر آپ کو نہیں پتا تو آج یہ جان لیں کہ زمزم کا کنواں مقام ابراہیم علیہ السلام اور حجر اسود کے درمیاں ہے جو خانہ کعبہ سے 21 میٹر کی دوری پر ہے۔

وہاں سے چار کیلومیٹر کی دوری پر سقیا زمزم نامی ایک سینٹر ہے جہاں زمزم کے پانی کو بوٹلوں میں بھر کر لوگوں کو دیا جاتا ہے، اس کارخانے میں ہر وقت تقریبا 17 لاکھ زمزم کی دس لیٹر والی بوٹلیں رکھنے کی جگھ موجود ہوتی ہے۔

 

وہاں پر

Maqraa

بھی ہے جس سے پوری دنیا کے لوگ اپنے گھر بیٹے حرم پاک کے قریب مختلف قاری کو قرآن پاک پڑھ کر سنائیں گے اور ان سے سیکھیں گے۔

یہ سروس 24 گھنٹے کی بلکل مفت میں دی جاتی ہے جس کو تین سال ہونے والے ہیں اور اس سروس سے تقریبا 180 ممالک کے لوگوں نے فائدہ اٹھایا ہے۔

وہاں پر سعودیہ کے بانی عبدالعزیز کے نام سے غلاف کعبہ کو بنانے کی ایک فیکٹری بھی ہے جہاں ہر سال ایک غلاف کعبہ تیار کیا جاتا ہے۔ اور اگر کسی کو وہاں غلاف کعبہ کی سلائی کرنے کا کام کرنا ہوتا ہے تو اسے پہلے 9 مہینے تک سیکھنا ہوگا پھر اسے وہاں غلاف کعبہ کی سلائی کے لئے بھیجا جاتا ہے۔

 

مکہ پاک میں اکثر گرمی ہوتی ہے وہاں کبھی کبھی چالیس یا پچاس ڈگری تک بھی گرمی پہنچ جاتی ہے۔ اس لئے وہاں حرم پاک کی زمین کے اندر ٹھنڈا پانی بھی ہوتا ہے اس لئے وہاں گرمی میں بھی آپ کو حرم پاک کی زمیں پر لگے

Marble

ٹھنڈے لگیں گے۔

مگر کیا آپ جانتے ہیں کہ وہ

Marble

کہاں سے لائے جاتے ہیں؟

وہ

Marble

یونان نامی ملک کے ایک

Thasos

نامی جگھ سے خاص منگوائے جاتے ہیں۔

صرف اتنا نہیں بلکہ ان

Marble

کو حرم پاک میں اس طرح لگایا جاتا ہے کہ سب کا رخ خانہ کعبہ کی طرف ہوتا ہے تاکہ جب بھی آذان یا نماز ہو تو لوگوں کو یہ پتا چل جائے کہ کس طرف اپنا رخ کر کے نماز پڑھیں

 

مکہ پاک میں حرم پاک کے لئے ایک

Al Maqsad

نامی اپلیکیشن بھی ہے۔ یہ اپلیکیشن آپ کو حرم پاک کی کسی بھی جگھ پر لے جا سکتی ہے۔

یہ اپلیکیشن عربی، اردو اور انگلش میں بھی ہے۔ اسے کھول کر آپ وہاں کسی بھی جگھ کا راستہ پوچھ سکتے ہیں اور یہ اپلیکیشن آپ کو وہاں تک پہنچا دے گی۔

 

وہاں پر آواز کا جو سسٹم ہے وہ دنیا کا ایک بڑا سسٹم مانا جاتا ہے جس کی غلطی کی گنجائش زیرو فیصد ہے۔

ما شاء اللہ

یہ بات شاید آپ کو پہلی بار پتا چلے گی کہ وہاں ایک نہیں دو نہیں بلکہ آواز کے چار سسٹم موجود ہے، اگر ایک خراب یا بند ہوجاتا ہے تو دوسرا خود بہ خود چل جائے گا جس سے آذان یا نماز کی آواز کبھی کٹ ہی نہیں سکتی۔

 

وہاں پر چھ ہزار سپیکر لگائے گئے ہیں اور چار سسٹم ہیں جن کے لئے خاص 50 لوگ رکھے گئے ہیں  جو ان کی دیکھ بھال کرتے رہتے ہیں۔

 

تقریبا 80 فیصد مسلمان عربی نہیں ہیں۔

سب سے زیادہ مسلمانوں والے پانج ممالک جن میں ایک بھی عربی ملک نہیں۔

جن کی خاطر حرم پاک میں 65 مختلف زبانوں کے ترجمے کے قرآن پاک رکھے گئے ہیں۔

صرف اتنا نہیں بلکہ جو لوگ عربی نہیں سمجھتے ان کے لئے پانچ مختلف زبانوں میں جمعے کے دن کا خطبہ چلایا جاتا ہے جس سے وہ اپنے موبایل پر ہی

Headphone

لگا کر پانچ مختلف زبانوں کا خطبہ براہ راست سن سکتے ہیں۔

اور تو اور جن لوگوں کو سنائی نہیں دیتا ان کے لئے وہاں خاص جگھ پر ایک شخص ان کو ہاتھ کے اشاروں سے جمعے کے خطبہ بتاتا رہتا ہے۔

 

جو لوگ نابینا ہوتے ہیں ان کے لئے ایک خاص قسم کے قرآن پاک وہاں رکھے گئے ہیں جو اپنی انگلیوں سے محسوس کر کے قرآن پاک پڑھتے ہیں۔

 

وہاں پر دس ہزار وہیل چیئر اور چار سو الکٹرک

وہیل چیئر ہیں جو معذوروں کو بلکل مفت میں دی جاتی ہیں۔

ایک اور خاص قسم کی وہیل چیئر بھی ہے جو ابھی تک نہیں لائی گئی مگر بہت جلد وہ بھی حرم پاک میں لائی جائے گی۔

وہاں پر ایسی الکٹرک وہیل چیئر بھی لائی جا رہی ہی جس پر تین لوگ بھی بیٹھ کر طواف کر سکتے ہیں۔

وہاں پر کچھ ایسے لوگ بھی ہیں جو باہر سے آئے بزرگ لوگوں کو وہیل چیئر پر بیٹھا کر بلکل مفت میں انہیں عمرہ کرواتے ہیں۔

 

آخر میں یہ بتاتا چلوں کہ رمضان مبارک کے مہینے میں حرم پاک میں تقریبا چالیس لاکھ لوگوں کے لئے افطاری کا سامان ہوتا ہے۔ پانچ لاکھ کھجوریں حرم پاک کے اندر اور پانچ لاکھ کھجوریں حرم پاک کے باہر روزے داروں کو دی جاتی ہیں۔ اور روزہ کھولنے کے بعد سب کچھ صرف اور صرف دو منٹ میں صاف کیا جاتا ہے کہ جیسے وہاں کچھ ہوا ہی نہیں تھا۔

 

 

 

بقــــــــــلم

ماجد

دوستوں سے شیئر کریں

تبصرہ کریں