بلوچستان میں الیکشن

بلوچستان میں الیکشن

بلوچستان

الیکشن

تحریر : ذوالفقار علی زلفی

سچ ہے ـ آپ نہیں مانتے یہ سب سے بڑا سچ ہے ـ بلوچستان میں "الیکشن" ہورہے ہیں ـ شتر مرغ کی طرح ریت میں سر چھپانا گر فائدہ مند ہے تو جاری رکھیں ـ

مانتے ہیں ـ بلوچستان ، پاکستان کی سب سے بڑی فوجی چھاؤنی ہے ـ چپے چپے پر خاکی وردی اور اس کے سائے ہیں ہیں ـ تسلیم راتوں رات "باپ" نامی اصطبل کے گھوڑوں نے "ٹرائے" میں گھس کر مستقبل کو واضح کردیا ہے ـ درست ہے جھاؤ، مشکے اور آواران میں مرد تو مرد عورتیں بھی اغوا ہورہی ہیں ـ مانا بلوچستان میں غیر پارلیمانی نظریے کا پرچار کرنا موت کو دعوت دینا ہے ـ سیاست مرچکی ہے، سیاسی کارکن عنقا ہے، نظریہ اڑن چھو ہوا ـ ڈیرہ بگٹی کسی کو "سرفراز" ہوا اور کوہلو پر "چنگیزی" حملہ کامیاب ہوا ـ

عوام اپنے فوری مسائل کا فوری حل چاہتے ہیں ـ یہ سیاسی شعور کی گراوٹ نہیں سماجی مجبوری ہے ـ بلوچ باشعور ہیں تبھی تو ٹروجن ہارس کا استعمال ہوتا ہے ـ عوام سے گلہ نہیں ، ہونا بھی نہیں چاہیے ـ بمباری، گھروں کا جلنا، خوف زدہ زندگی، بے عزت روز و شب، خواتین کی بے توقیری، پیاروں کی گمشدگی اور روز گرتی مسخ لاشیں ؛ یہ سب اسی عوام نے برداشت کیا جسے کچھ قوم پرست "شعور سے عاری" قرار دے رہے ہیں ـ

بندوق کے سائے میں سہی، میڈیا پروپیگنڈے کے زیر اثر ہی سہی، اختر مینگل کی بے سود امیدوں کی سڑتی لاش پر سہی ـــــــ "الیکشن" ہورہے ہیں ـ

آپ کی تحریک اور منزل ہی پاکستانی نوآبادیاتی نظام کی شکست و ریخت کا درست اور مادی راستہ ہے مگر مان لیں آپ غلط ٹرین پکڑ چکے ہیں ـ دیر نہیں ہوئی، اسی اسٹیشن پر اتر کر ٹرین بدل لیں ــــ ضد ہے ٹرین یہی رہے گی تو ٹھیک ہے پھر "آسمی بلوچ" اور "جان محمد دشتی" سے گلہ بھی نہ کریں، انہیں بھی تو کچھ نہ کچھ کرنا ہے ــــ

ہم تو مان چکے ـ آپ بے شک نہ مانیں ـ بلوچستان میں "الیکشن" ہورہے ہیں ـ

دوستوں سے شیئر کریں

تبصرہ کریں