ریحام خان کی کتاب

ریحام خان کی کتاب

سوشل میڈیا پر ریحام خان کی آنے والی کتاب پر مختلف تبصرے سامنے آ رہے ہیں۔ کوئی اس کے پیچھے مسلم لیگ ن کا ہاتھ دیکھ رہا ہے تو کوئی اسے عالمی سازش قرار دے رہا ہے۔ کچھ لوگوں نے یہ انکشاف بھی کیا ہے کہ اس کتاب میں ریحام خان نے یہ بھی لکھا ہے کہ عمران خان اپنے والد کو قتل کرنا چاہتے تھے۔

بہرحال کتاب میں کیا لکھا ہے یہ تو بعد میں پتہ چلے گا لیکن ریحام خان نے کتاب شایع کرنے کے لیے بہترین وقت کا انتخاب کیا ہے۔ جس حساب سے لوگ اس پر تبصرے کر رہے ہیں ایسا لگ رہا ہے یہ اس کتاب کے پبلشر کے وارے نیارے ہوجائیں گے اور ریحام خان ایک دفعہ پھر گوگل سرچ میں پہلے نمبر پہ آئیں گی۔

یقینا یہ کتاب ہاتھوں ہاتھ بک جائے گا، ہزاروں تجزیے لاکھوں تبصرے ہوں گے۔ غرض جتنے منہ اتنی باتیں۔

لیکن سوال یہ ہے کہ کیا اس کتاب سے پاکستان کی سیاست پر کوئی اثر پڑے گا ؟

جہاں تک مجھ جیسے عام آدمی کی رائے ) جو بقول یوسفی ضروری نہیں کہ ناقص ہی ہو ( ہے کہ ہم پاکستانی اپنے لیڈر کے محبت میں کشتیاں جلا کر نکلے ہیں اب واپسی کی کوئی امید نہیں ہے۔

اس کتاب میں کسی بھی سیاسی شخصیت کے بارے میں بھلے ہی کتنے الزامات یا حقائق سامنے آئیں ہم ان کی تحقیق سے پہلے ہی جھٹلا دیں گے ۔ اپنے لیڈر کا دفاع کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی ہر غلط سرگرمی پر جواز بھی فراہم کریں گے۔
یہ صرف ایک سیاسی پارٹی کا المیہ نہیں ہے بلکہ قومی مسئلہ ہے ۔

چاہے وہ نواز شریف کا ممبئی والا بیان ہو یا پھر مولانا منظور کا بینگن کے متعلق آزادانہ اظہار خیال ہو ، ووٹر اپنے لیڈر کی حرکتوں پر بغلیں بجاتا ہوا نظر آئے گا کیونکہ ووٹر اپنے لیڈر کا غلام ہوتا ہے بینگن کا نہیں۔

دوستوں سے شیئر کریں

تبصرہ کریں