گوگل ایڈسینس اپروو کروانے کا صحیح طریقہ

How to get Google AdSense approval


گوگل ایڈسینس کیسے اپروو کریں

ایڈسینس اپروو کرنے کا طریقہ

گوگل ایڈسینس کیا ہے ؟

گوگل ایڈسینس ایک ایڈورٹائزمنٹ نیٹ ورک یعنی اشتہارات فروخت کرنے والی کمپنی ہے۔ آسان الفاظ میں یہ کہ گوگل ایڈسینس سے آپ اپنی ویب سائٹ پر اشتہارات لگا کر پیسے کما سکتے ہیں۔ آج کل تقریبا تمام ویب سائٹس گوگل کے اشتہارات سے چل رہے ہیں۔ یوں تو اس طرح کے بہت سے نیٹ ورک موجود ہیں جو اشتہارات پر پیسے دیتے ہیں جیسے میڈیا ڈاٹ نیٹ ، انفو لنکس وغیرہ مگر گوگل ایڈسینس سب سے مقبول اور سرفہرست ہے۔ کیونکہ گوگل بہت سے ممالک اور زبانوں میں دستیاب ہے اور اچھی خاصی آمدنی دیتا ہے۔اس کے علاوہ گوگل ایڈسینس اکاؤنٹ حاصل کرنا اور اس سے رقم کی وصولی بھی نہایت آسان ہے۔
اشتہارات دینے والوں کو ایڈورٹائزر اور اپنی ویب سائٹ پر ان اشتہارات کو شایع کرنے والوں کو پبلشر کہتے ہیں۔
مختلف کمپنیاں اپنے مصنوعات کی مشہوری کے لیے گوگل کو پیسے دیتی ہیں اور گوگل ویب سائٹس پر اشتہارات دکھا کر پبلشرز کو پیسے دیتا ہے۔
ویب سائٹ کے علاوہ یوٹیوب ویڈیوز پر دکھائے جانے والے اشتہارات بھی گوگل ایڈسینس کے ہوتے ہیں۔

اہلیت کا معیار

 
آج کل بہت سے لوگوں گوگل ایڈسینس اکاؤنٹ حاصل کرنے میں مشکلات درپیش ہیں۔ جس کی بنیادی وجہ انٹرنیٹ پر موجود افواہیں اور غلط بیانیاں ہیں۔ کیونکہ لوگ اپنے ایڈسینس اکاؤنٹ فروخت کرنے کے لیے یہ تاثر دیتے ہیں کہ پاکستان اور اردو زبان میں ایٖڈسینس اکاؤنٹ ملنا محال ہے حالانکہ یہ سب سے بڑا جھوٹ ہے۔ گوگل ایڈسینس حال ہی میں اردو زبان کو  سپورٹڈ لینگویج لسٹ میں شامل کر چکا ہے۔ اور اردو ویب سائٹس کو اہمیت دیتا ہے۔ جس کا ثبوت یہ ویب سائٹ بھی ہے جس پر آپ یہ مضمون پڑھ رہے ہیں۔
گوگل کے قوانین اور شرائط کی پاسداری کرتے ہوئے آپ پاکستان میں اور خاص کر اردو زبان میں بآسانی ایٖڈسینس اکاؤنٹ حاصل کر سکتے ہیں۔ہم یہاں اپنے تجربے اور ریسرچ کے مطابق تمام لازمی چیزوں کا احاطہ کریں گے۔
 اکاؤنٹ حاصل کرنے کے لیے آپ کے پاس ایک ویب سائٹ یا بلاگ کا ہونا ضروری ہے۔ اپلائی کرنے کے لیے پہلے تو ویب سائٹ کے ڈیزائن پر توجہ دیں کیونکہ ویب سائٹ کی ڈیزائن سب سے اہم ہوتی ہے۔ اپنی ویب سائٹ کا تھیم ایسا رکھیں جو موبائل فرینڈلی بھی ہو یعنی موبائل پر بھی اچھی طرح دکھائی دے اس کے علاوہ سرچ انجن اور ایڈسینس فرینڈلی ہونے کے ساتھ ساتھ یوزر فرینڈلی بھی ہو تاکہ آپ کے آڈینس کے لیے استعمال کرنے میں آسان ہو اور اس میں اشتہارات کے لیے مناسب جگہ یا ایک سائیڈ بار موجود ہو۔گوگل کے شرائط و ضوابط کے مطابق منشیات ، فحاشی اور ہیکنگ وغیرہ کے متعلق ویب سائٹس ایڈسینس اکاؤنٹ حاصل کرنے کے اہل نہیں ہیں۔ گوگل ایڈسینس کے لیے ویب سائٹ پر زیادہ ٹریفک کی کوئی شرط نہیں ہے۔ آپ زیرو ٹریفک کے ساتھ بھی اپلائی کر سکتے ہیں کیونکہ گوگل صرف ویب سائٹ کی کوالٹی کو ترجیح دیتا ہے۔

گوگل کی پالیسی کے مطابق ویب سائٹ پر بیس یا تیس مضامین کا ہونا لازمی ہے۔ مضامین منفرد معیاری ہونے چاہییں جن میں لوگوں کے لیے دلچسپی کا سامان ہو ۔ اگر آپ کی ویب سائٹ پر کاپی شدہ تحریریں یا تصویریں ہیں تو فورا ہٹا دیں کیونکہ گوگل کی نگاہیں بہت تیز ہیں اگر چوری پکڑی گئی تو اپروول ملنا نا ممکن ہے۔چند تحریں خود لکھیں اور تصویریں خود بنائیں۔ تصاویر کا Caption یعنی تصویر کے نیچے اس کا نام یا معلومات ضرور لکھیں۔اکثر لوگ کاپی رائٹ کی وجہ سے گوگل کے در سے نامراد لوٹتے ہیں۔ پالیسی کے مطابق ویب سائٹ کی ڈومین چھ ماہ پرانی ہو مگر اس ویب سائٹ کو صرف چالیس دن ہوچکے ہیں پھر بھی اپروو ہوگیا ہے۔ ویب سائٹ پر پرائیویسی پالیسی ، رابطہ اور اباؤٹ پیج کا ہونا لازمی ہے۔ پرائیویسی پالیسی بنانے کے لیے گوگل پہ سرچ کر کے اپنی پالیسی بنائیں یا کسی بھی ویب سائٹ کی پرائیویسی پالیسی کاپی کر کے اس پر اپنی ویب سائٹ کا لنک شامل کر کے اپنی ویب سائٹ پر لگا دیں۔

ویب سائٹ پر کیٹیگریز بنائیں اور ہر آرٹیکل کو اس کے زمرے میں رکھیں۔ ویب سائٹ پر اپنا گوگل پلس پروفائل یا فیس بک پیج ڈال دیں جیسے کہ اس ویب سائٹ ہمارا پیج شیطانیاں موجود ہے۔ ویب سائٹ پر تازہ ترین مواد موجود ہونا لازمی ہے ایسا نہ ہو کہ آپ کے پاس پرانی تحریریں بیک اپ میں موجود ہوں اور آپ نے انہیں restore کیا ہو۔ ہفتے میں تین مضامین ضرور لکھیں تاکہ یہ تاثر قائم ہو کہ آپ باقائدگی سے ویب سائٹ کو اپڈیٹ کر رہے ہیں۔ ویب سائٹ یا بلاگ میں سرچ کا آپشن ضرور دیں۔
تصویریں اور ویڈیوز گوگل ایڈسینس کو پسند نہیں ہیں لہذا تصاویر اور ویڈیوز سے اجتناب کریں۔ گوگل کے ساتھ ایمانداری کا مظاہرہ کریں آپ کی ویب سائٹ جس زبان میں ہے اسی زبان میں اشتہارات کے لیے اپلائی کریں۔
ویب سائٹ کے تمام پیجز میں مواد کا ہونا لازمی ہے یعنی کوئی بھی پیج یا لنک خالی نہ ہو۔تمام پیجز کو ویب سائٹ کے مینو میں ضرور ڈالیں جیسا کہ آپ اس ویب سائٹ پر دیکھ سکتے ہیں۔ ورڈپریس میں کیٹیگری کو مینو میں ڈالنا آسان ہے بلاگر استعمال کرنے والے اپنے تھیم کے مطابق Labels کو بطور مینو اور کیٹیگری استعمال کریں۔ ویب سائٹ پر فالوورز ، تازہ ترین پوسٹس اور کمنٹس کا Gadget ضرور ڈالیں۔ اس کے علاوہ فالو بائے ای میل اور فالورز کو بھی ظاہر کریں۔ اپنی ویب سائٹ کو گوگل سرچ میں ضرور داخل کریں اس کے علاوہ ہر تحریر میں اس کا سرچ description ضرور لکھیں۔گوگل کو یوزر فرینڈلی ویب سائٹس پسند ہیں اس لیے آپ اپنے آڈینس کے لیے آسانیاں پیدا کریں کہ انہیں کوئی بھی تحریر ٖڈھونڈنے میں مشکل نہ ہو۔ اس کے لیے آپ ہر آرٹیکل کے اندر درمیان یا آخر میں دوسرے آرٹیکل کا لنک دیں۔ سب سے اہم بات کہ ویب سائٹ کے لیے .com ڈومین خریدیں۔ ورڈپریس کے مفت بلاگ سے اپلائی نہیں کر سکتے لیکن بلاگر کے مفت بلاگ سے اپلائی کیا جا سکتا ہے مگر ہم آپ کو تجویز کریں گے کہ ڈومین ضرور خریدیں ورنہ گوگل کسی نہ کسی بہانے سے آپ کا بلاگ ریجیکٹ کر دے گا۔
جلد بازی سے کام نہ لیں مندرجہ بالا تمام امور مکمل ہونے کے بعد اپلائی کریں۔
 

ایڈسینس کے لیے اپلائی کرنے کا طریقہ

 
سب سے پہلے اپنے ایڈسینس سائن اپ میں جائیں۔ اپنی gmail id سے سائن اپ کریں۔وہاں اپنے ویب سائٹ کا ایڈریس لکھیں۔اور ویریفیکیشن کوڈ کاپی کر کے ویب سائٹ کے <head> ٹیگ کے میں ڈال دیں۔ اگر آپ بلاگر استعمال کر رہے ہیں تو بلاگر سے لاگ ان ہو کر Earning کے آپشن پر کلک کریں۔ وہاں سے ایڈسینس میں جائیں گے تو ویریفیکیشن کی ضرورت نہیں ہوگی۔ اس کے بعد اپنا نام پتہ جو شناختی کارڈ پہ ہے لکھیں۔ پتے میں اپنے علاقے کا پوسٹل زپ کوڈ معلوم کر کے ضرور لکھیں۔ پتہ بالکل درست ہونا چاہیے کیونکہ بعد میں اسی پتے پر آپ گوگل کی طرف سے رقم یا پن ویریفیکیشن لیٹر حاصل کریں گے۔ درخواست Submit کرنے کے بعد اپنا گوگل ایڈسینس کوڈ کاپی کر کے ویب سائٹ کے <head> ٹیگ کے نیچے پیسٹ کریں۔ اگر کوڈ داخل کرنے میں error آ رہا ہے تو کوڈ کے اندر موجود async اور src کے درمیان space کو ختم کریں یا پھر لے آؤٹ میں جا کر HTML JavaScript میں گوگل ایڈسینس کوڈ ڈال دیں۔ اس کے بعد انتظار کریں تقریبا دو یا تین دن کے اندر گوگل کی طرف سے آپ کو ایک ای میل آئے گا جس میں آپ کو اطلاع دی جائے گی کہ آپ کا اکاؤنٹ اپروو ہوگیا ہے یا نہیں۔
اگر آپ نے مندرجہ بالا طریقے کو فالو کرتے ہوئے اپلائے کیا ہے تو اپروو ہونے کے سو فیصد چانسز ہیں۔ اگر پھر بھی کسی وجہ سے ریجیکٹ ہوجائے تو گوگل آپ کو اس کی وجہ بھی بتائے گا۔ یقینا ویب سائٹ کی سیٹنگ میں کوئی کمی رہ گئی ہوگی اس کمی کو پورا کر کے دوبارہ اپلائی کریں۔
یاد رکھیں بار بار resubmit نہ کریں ایک بار ریجیکٹ ہونے کے بعد تقریبا ایک ہفتے بعد دوبارہ اپلائی کریں۔

ہمارے اپروول کی کہانی۔

 
پہلی بار اپلائی کرتے وقت اس یب سائٹ پر ہم نے 1600 پوسٹیں کاپی کر کے ڈالی تھیں۔ کچھ پوسٹیں ایک اور بلاگ سے بیک اپ کر کے restore کر لی تھیں۔ اس وقت کوئی ڈومین نہیں خریدا تھا۔ گوگل نے ریجیکٹ کر دیا۔ دوسری مرتبہ ایک دوست نے بتایا کہ انگلش ویب سائٹ سے اپروول لے لو۔ اس دوست نے کچھ انگریزی تحریریں بیک اپ میں دے دیں۔ ہم نے دوبارہ انگلش ویب سائٹ کے نوک پلک سنوار کر اپلائی کر دیا مگر پھر ریجیکٹ ہوگیا اور ہم مایوس ہو گئے۔ غصے میں آ کر تمام کاپی شدہ تحریریں حذف کر دیں اور خود ہی تحریریں لکھنے کا فیصلہ کر لیا۔ جب تیرہ جی ہاں صرف تیرہ آرٹیکلز لکھ لیے تو یوں ہی ایک رات بے دلی سے اپلائی کر دیا اپروو ہونے کی کوئی امید نہیں تھی۔ اس لیے گھوڑے بیچ کر سو گئے۔ دو دن بعد جب ایک دوست کا ای میل آ گیا اسے دیکھنے کے لیے اکاؤنٹ کھولا تو یہ دیکھ کر یقین نہیں آیا گوگل ہمبئ مبارک باد پیش کر رہا ہے کہ آپ کی ویب سائٹ پر اشتہارات لگا دیے گئے ہیں۔
 یوں ہم نے ایڈسینس اکاؤنٹ حاصل کرنے بعد تمام دوستوں سے اپنا تجربہ پیش کرنے کا فیصلہ کیا۔
یہ بھی پڑھیں

4 تبصرے

  1. Umar Mukhtar نے کہا:

    awsome web bro.. really like your work.

    i have a question meri website approve nhi ho rhi Adsense k liye 3 baar reject ho chuki he...http://www.theiconichealth.com aesa kia kru isme approve ho jae guide please

  2. Adeel Khan نے کہا:

    mera account bhi aise hi approve hua...pehle mn ne copy paste k 500 tak articles create kie but reject hue..but jb mn ne khud 30 articles likhay to google ne approval day dia...aur woh bhi free .blogspot wli domain pe approval mila...you can check https://adeelstriker.blogspot.com

جواب دیجئے