اوج ادب کیا ہے ؟ اوج ادب کی تفصیلات

اوج ادب

اوج ادب کیا ہے ؟

اوج ادب کا تعارف

نوٹ : میں اوج ادب کا ایک عام رکن ہوں اور یہ تحریریں صرف ان لوگوں کی آگہی کے لیے لکھ رہا ہوں جو فیس بک پر مجھ سے اوج ادب کے بارے میں پوچھتے رہتے ہیں چونکہ ایک میسج میں اوج ادب کا تفصیلی تعارف دینا مشکل ہے اس لیے ان دوستوں کو اس تحریر کا لنک دیتا ہوں اگر کہیں کوئی غلطی یا مبالغہ نظر آئے تو اوج ادب سے جوڑنے کے بجائے بندے کی غلط فہمی پر محمول کریں۔ رحیم بلوچ

اوج ادب تعارف

 

اوج ادب فیس بک پر ایک ادبی گروپ کا نام ہے جو ایک ادبی تحریک ہے جسے اردو سے محبت کرنے والوں نے شروع کیا ہے تاکہ سب ایک ساتھ مل کر اردو ادب کی آبیاری کر سکیں۔
اوج ادب اپنے ممبران سے سالانہ فیس وصول کرتی ہے بدلے میں انہیں مکمل ادبی فضا فراہم کرتی ہے۔
اوج ادب کا مقصد معیاری ادب کو فروغ دینا ہے۔

اوج ادب کی سرگرمیاں انعامی مقابلے

 

اوج ادب میں شاعری اور نثر نگاری کے مختلف انعامی مقابلے ہوتے ہیں۔ اوج ادب میں اب تک چار بڑے انعامی مقابلے منعقد ہوچکے ہیں عنقریب پانچویں مقابلے کا اعلان ہونے والا ہے۔
ان مقابلوں میں میں جیتنے والے خوش نصیبوں کو پچاس ہزار سے لے کر پانچ لاکھ روپے تک نقد انعام اور تیس پینتیس افراد کو عمرے کے ٹکٹ بھی بطور انعام دیے جا چکے ہیں۔
اس کے علاوہ چھوٹے چھوٹے مقابلے بھی ہوتے رہتے ہیں جن میں ایک ہزار سے بیس ہزار روپے تک کا انعام دیا جاتا ہے۔
اوج ادب کی انتظامیہ ہر وقت حاضر رہتی ہے۔ ہر رکن کا ممبر نمبر الگ ہوتا ہے۔
تمام ارکان کی تخلیقات ایک جگہ پر محفوظ کی جاتی ہیں.تمام سرگرمیوں کے لنک ایک پوسٹ میں جمع کیے جاتے ہیں تاکہ تمام تحریریں تلاش کرنے میں آسانی ہو۔
اوج ادب میں آپ اپنی کاوشیں اصلاح کے لیے بھی شایع کر سکتے ہیں  اس کے علاوہ مضمون نویسی ، مکالمے ، ادبی مباحثے ،طرحی مشاعرے، نعتیہ مشاعرے، فی البدیہہ مشاعرے اور دیگر ادبی سرگرمیاں جاری رہتی ہیں۔
اوج ادب کی پرائیویسی پبلک رکھی گئی ہے گروپ کی سرگرمیاں سب دیکھ سکتے ہیں مگر ان سرگرمیوں شامل ہونے کے لیے اوج ادب کا ممبر ہونا لازمی ہے۔
اوج ادب گروپ وزٹ کر کے آپ گروپ کے ماحول کا اندازہ لگا سکتے ہیں۔
اوج ادب

اوج ادب اہلیت کا معیار

 

اوج ادب میں صرف پختہ کار شاعروں ادیبوں اور نثر نگاروں کو داخلہ ملتا ہے۔ یعنی کسی ایک شعبے میں ان کی مہارت تسلیم شدہ ہو یا ان کی تخلیقات میں غلطیاں نہ ہونے کے برابر ہوں۔

اوج ادب داخلہ فیس

 

اوج ادب میں داخلہ فیس ایک ہزار روپے ہے اور سالانہ فیس بھی ایک ہزار روپے ہے۔

اوج ادب میں داخلہ لینے کا طریقہ

 

اگر آپ اوج ادب کے رکن بننا چاہتے ہیں تو اوج ادب کی انتظامیہ سے رابطہ کریں۔ اپنی کاوشیں اوج ادب کو بھیجیں اگر آپ کی تحریروں میں غلطیاں نہ ہونے کے برابر ہیں تو آپ کو داخلہ مل سکتا ہے۔
اگر آپ کی نگارشات کسی اخبار یا رسالے میں شایع ہوچکی ہیں تو وہ بھی ثبوت کے طور پر ارسال کریں۔
اگر آپ کے پاس کوئی تحریری ثبوت نہیں ہے تو کسی ایسے مقابلے کا انتظار کیجیے جو پبلک کے لیے ہو کیونکہ اوج ادب گاہے بگاہے ایسے مقابلے منعقد کراتا ہے جس میں ہر کوئی حصہ لے سکتا ہے۔ اس مقابلے میں اپنی قابلیت کے جوہر دکھا کر آپ اوج ادب میں شمولیت کاموقع حاصل کر سکتے ہیں۔
اگر آپ اوج ادب کے معیار پر پورا اترتے ہیں تو اوج ادب کی جانب سے آپ کو شمولیت کا دعوت نامہ ارسال کیا جاتا ہے۔
یہ دعوت نامہ اوج ادب کے پیج اور اوج ادب کے ذیلی گروپ ‘اعلانات برائے اوج ادب’ میں شایع کیا جاتا ہے۔
دعوت نامہ جاری ہونے کے بعد فیس جمع کرانے کا طریقہ آپ کو انباکس میں بتایا جاتا ہے۔
فیس جمع کراتے ہی آپ کو اوج ادب کی ممبرشپ مل جاتی ہے اور آپ کا ممبر نمبر بھی آپ کو بتا دیا جاتا ہے۔

رابطہ

رابطے کے لیے اوج ادب کی ویب سائٹ جو ابھی زیر ترتیب ہے بہت جلد مکمل ہوجائے گی۔
www.aojeadab.com
فی الحال فیس بک پیج جوائن کر کے داخلہ لے سکتے ہیں جس کا لنک یہ ہے۔اوج ادب Page
اسکے علاہ اوج ادب کا ایک ذیلی گروپ ‘اعلانات برائے اوج ادب ‘ بھی موجود ہے۔
جس کا لنک یہ ہے۔
اعلانات براۓ اوج ادب

ضروری نوٹ

 

کچھ لوگ یہ سوچ کر داخلہ لینے میں ہچکچا رہے ہوں گے کہ ہوسکتا ہے اوج ادب ایک دھوکہ ہو یا ادب کے نام پر کاروبار کیا جا رہا ہے۔ اس کی فیس زیادہ ہے یا انعام جیتنے کے بعد پیسے ملیں گے بھی یا نہیں۔
ان سے گزارش ہے کہ ادب کے بہت سے بڑے نام اس گروپ کو چلا رہے ہیں۔ اور اب تک لاکھوں روپے اپنے جیب سے خرچ کر کے لوگوں میں بانٹ چکے ہیں۔
رہی بات فیس کی تو فی مہینے صرف 83 روپے بنتے ہیں۔
اتنے پیسے تو آپ فی دن سگریٹ پی کر ضایع کر دیتے ہیں۔
بہرحال یہ تھا اوج ادب کا تفصیلی تعارف جو کہ مفاد عامہ کے غرض سے شایع کیا گیا۔
اگلی تحریر میں اوج ادب کے ایک ذیلی گروپ ’راہ اوج’ کا تعارف پیش کیا جائے گا۔
جس میں ہر کوئی داخلہ لے کر اساتذہ کی رہنمائی سے مختلف کورسز پاس کرنے کے بعد اوج ادب میں شامل ہونے کا موقع حاصل کر سکتا ہے۔
یہ بھی پڑھیں
راہ اوج کا تعارف
۔
کیٹاگری میں : ادب

جواب دیجئے