ایکسپائرڈ ویزہ ہولڈرز ڈیڈ لائن ختم

ایکسپائرڈ ویزہ ہولڈرز ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد کئی جرمانوں کے لیے تیار رہیں حکومت کے مطابق فوری طور پر 100 درہم کا جرمانہ ہو گا،

 اس کے بعد یومیہ 25 درہم کا جرمانہ عائد ہوتا رہے گا، واپسی کے وقت بھی 250 درہم کا جرمانہ ہو گا

ریاض ( اکتوبر2020ء) متحدہ عرب امارات کی جانب سے خبردار کیا گیا ہے کہ جوایکسپائرڈ ویزہ ہولڈرز 12 اکتوبر سے پہلے امارات سے واپس نہیں جائیں

 گے یا نیا ویزہ حاصل کر لیں ، انہیں ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد کئی قسم کے جرمانوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

فیڈرل اتھارٹی فار آئیڈنٹٹی اینڈ سٹیزن شپ (ICA)نے ایکسپائرڈ ویزہ رکھنے والوں کو خبردار کیا ہے

 کہ 12 اکتوبر 2020ء سے ایکسپائرڈ ویزہ ہولڈرز کو فوری طور پر 100 درہم کا جرمانہ عائد ہو گا۔

ان زائد المیعاد ویزہ ہولڈرز پر اس وقت تک روزانہ 25 درہم کا جرمانہ عائد ہوتا رہے

 گا جب تک وہ امارات سے واپس نہیں چلے جائیں گے یا پھر نیا ویزہ حاصل کر کے اپنے غیر قانونی سٹیٹس میں تبدیلی نہیں کروائیں گے۔

اس کے علاوہ اپنے اماراتی آئی ڈی کی تجدید نہ کروانے پر بھی یومیہ 20 درہم کا جرمانہ ہو گا۔

غیر قانونی تارکین کو امارات سے واپسی کے روزبھی اضافی 250 درہم بطور جرمانہ ادا کرنا ہوں گے۔

ICA نے واضح کیا ہے کہ تارکین وطن پر غیر قانونی قیام پر جرمانے کی مجموعی حد 1 ہزار درہم مقرر کی گئی ہے۔

جب جرمانے ایک ہزار درہم تک ہو جائیں گے تو پھر مزید جرمانہ عائد نہیں ہو گا۔

 جو تارکین اپنے ویزہ سٹیٹس کے بارے میں جاننا چاہتے ہیں وہ ICA کی ویب سائٹ www.ica.gov.ae پر جا کرمعلوم کر سکتے ہیں۔

ICA نے ٹویٹر اکاؤنٹ پر انتباہ کیا ہے کہ جن تارکین کے رہائشی ویزے یکم مارچ سے 12 جولائی کے بعد منسوخ یا ایکسپائر ہو چکے ہیں

انہیں امارات سے واپس جانے یا ویزوں کی تجدید کے لیے ایک ماہ کی مہلت دی گئی ہے جو کہ11 اکتوبر کے روز ختم ہو جائے گی۔

ایکسپائرڈ ویزہ ہولڈرز کے پاس اب صرف 5 روز کا وقت بچا ہے۔جو لوگ 12 اکتوبر سے پہلے نیا ویزہ حاصل نہیں کریں گے یا امارات سے واپس نہیں جائیں گے۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Articles You May Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *