ختم نبوت کانفرنس،295Cکی حفاظت ایمانی وآئینی فرض،مقررین

ختم نبوت کانفرنس کے اختتامی سیشن کی آخری نشست کی صدارت فضیلتہ الشیخ مولانااسعد محمود (مکہ مکرمہ)نے کی۔

 

 

 

کانفرنس میں مولانا حافظ طاہر محمود اشرفی اور علامہ ناصر مدنی نے خصوصی طورپر شرکت کی۔

 

 

 

سالانہ ختم نبوت کا نفرنس سے مقررین نے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ امریکہ کے کمیشن برائے مذہبی آزادی کے

 

 

 

 

 

اراکین و برطانوی پارلیمنٹ کے ممبران کی جانب سے قادیا نیوں کی حمایت پر پاکستان کی حکومت کو نوٹس لینا چاہیے ،

 

 

 

قانون ناموس رسالت 295C اور عقیدہ ختم نبوت کی آئینی شقوں کی حفاظت ہمارا ایمانی وآئینی فریضہ ہے،

 

 

 

 

تحفظ بنیاد اسلام بل وقت کا اہم تقاضا ہے جس کا نفاذ ناگزیر ہے،بل کی حمایت کرتے ہیں،

 

 

 

سویڈن اور ناروے میں قرآن پاک کی بے حرمتی کرنے گستاخانہ خاکے بنانے والے گستاخ دنیا میں سب سے بڑے دہشت گرد ہیں۔

 

 

 

 

 

6ستمبر ملکی سرحدوں کی دفاع کا دن ہے اور 7ستمبرختم نبوت کی سرحدوں کے دفاع کا دن ہے۔

 

 

 

 

کانفرنس سے فضیلۃ الشیخ مولانا اسعد محمود مکی(مکہ مکرمہ)، مولانا حافظ طاہر محمود اشرفی ،

 

 

 

جمعیۃ علماء اسلام(س)کے سیکرٹری جنرل مولانا عبدالرؤف فاروقی ، مجلس احرارا سلام کے سیکرٹری جنرل عبداللطیف خالد چیمہ ،

 

 

 

 

انٹر نیشنل ختم نبوت موومنٹ پاکستان کے امیر مولانا محمد الیاس چنیوٹی ، علامہ ناصرمدنی ، مو لانا قا ری شبیر احمد عثمانی ، چوہدری شہباز احمد گجر ،

 

 

 

 

طاہر عبدلرزاق ، علامہ شفاعت رسول قادری ودیگرنے خطاب کیا۔ شعراء کرام مولانا شاہد عمران عارفی،

 

 

 

حافظ افتخار فخر قصوری نے خصوصی طور پر ختم نبوت کانفرنس میں نعت رسول مقبول ؐ سے سامعین کے دلوں کو حضور ؐ کی محبت سے منور کیا،

 

 

 

 

رات کے آخری حصہ میں مولانامحمد الیاس چنیوٹی کی رقت آمیز دعا پر کانفرنس کا اختتام ہوا انہوں نے عالم اسلام

 

 

 

 

اور استحکام پاکستان کشمیری و دنیا بھر کے مظلوم مسلمانوں کیلئے خصوصی دعا کروائی۔اس کے بعدتہجد کے وقت کانفرنس اختتام پذیر ہو ئی۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Articles You May Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *