پاکستان میں الیکٹرک بسیں اسی سال چلنے کیلئے تیار

اسلام آباد ( آن لائن ) وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ اس سال سے پاکستان میں الیکٹرک بسیں چلنا شروع ہو جائیں گی

اور تین سال کے دوران ان بسوں کی مکمل مینوفیکچرنگ پاکستان میں شروع ہو جائے گی، اگلے 3 سے 5 سالوں میں شائد موبائل بیٹریز کو ریچارج کی ضرورت ہی نہ پڑے۔

بجلی کی تاریں اور گرڈ اسٹیشن بھی ختم ہو سکتے ہیں۔ڈاؤو پاکستان اور سکائی ول کمپنی کے درمیان معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ آلودگی کی وجہ سے لوگ بیمار ہوتے ہیں سردیو ں میں لا ہور میں لاگ گھروں سے نہیں نکل سکتے اتنی الودگی ہو تی ہے تاہم وزیراعظم عمران خان ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کے لئے کام کررہے ہیںہم نے ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے منزل آسان بنانی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ دنیا میں بغیر ڈرائیور کے بیسیں چلیں گی جب کہ پاکستان جنوبی ایشیا کا پہلا ملک ہوگا جہاں الیکٹرک بسیں چلیں گی اسکائی وہیل اور ڈائیو کا مشترکہ معاہدہ ملک کے لیے بڑی کامیابی ہے ۔

پاکستان اپنا سپیس مشن اگلے سال بھیجے گا۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کورونا کیس آنے کے بعدماسک باہر سے منگوا رہے تھے لیکن اب ہم ماسک اور دیگر حفاظتی سامان میں خودکفیل ہیںحکومت پاکستان میں سولر اور ونڈ کے ذریعے متبادل توانائی کے ذرائع بڑھا رہی ہے۔

ملکی منصوبہ بندی10 سال سے زیادہ نہیں ہو سکتی اور ہم اپنی پوری کوشش کر رہے ہیں کہ ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے ترقی کی رفتار میں تیزی لائی جائے گی ۔

وزیر سائنس و ٹیکنالوجی کا کہنا تھا کہ جدید ٹیکنالوجی کی طلب کو سامنے رکھتے ہوئے 10 سالہ پالیسی بنانا ہوگی۔

بجلی کی تاریں اور گرڈ اسٹیشن بھی ختم ہو سکتے ہیں۔ڈاؤو پاکستان اور سکائی ول کمپنی کے درمیان معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ آلودگی کی وجہ سے لوگ بیمار ہوتے ہیں۔

سردیو ں میں لا ہور میں لاگ گھروں سے نہیں نکل سکتے اتنی الودگی ہو تی ہے تاہم وزیراعظم عمران خان ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کے لئے کام کررہے ہیںہم نے ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے منزل آسان بنانی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ دنیا میں بغیر ڈرائیور کے بیسیں چلیں گی جب کہ پاکستان جنوبی ایشیا کا پہلا ملک ہوگا جہاں الیکٹرک بسیں چلیں گی اسکائی وہیل اور ڈائیو کا مشترکہ معاہدہ ملک کے لیے بڑی کامیابی ہے پاکستان اپنا سپیس مشن اگلے سال بھیجے گا۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کورونا کیس آنے کے بعدماسک باہر سے منگوا رہے تھے لیکن اب ہم ماسک اور دیگر حفاظتی سامان میں خودکفیل ہیںحکومت پاکستان میں سولر اور ونڈ کے ذریعے متبادل توانائی کے ذرائع بڑھا رہی ہے۔

ملکی منصوبہ بندی10 سال سے زیادہ نہیں ہو سکتی اور ہم اپنی پوری کوشش کر رہے ہیں کہ ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے ترقی کی رفتار میں تیزی لائی جائے گی ۔

وزیر سائنس و ٹیکنالوجی کا کہنا تھا کہ جدید ٹیکنالوجی کی طلب کو سامنے رکھتے ہوئے 10 سالہ پالیسی بنانا ہوگی۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Articles You May Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *