وہ حسین لڑکی جس کی وجہ سے وائی فائی اور بلوٹوتھ ایجاد ہوئی

وہ حسینہ جسکی مدد سے وائی فائی، بلیو ٹوتھ اور جی پی ایس جیسی ایجادات ممکن ہوسکیں

آجکل ہم میں سے ہر کوئی وائی فائی کنیکشن لگوانے کی خواہش رکھتا ہے یا پھر ہمسائیوں کا وائی فائی پاسورڈ چرانے کی، تاکہ وہ انٹرنیٹ ایک بہترین سپیڈ اور ڈیٹا لمٹ کے بغیر اور محفوظ ہوکر چلا سکے اسکے علاوہ وہ بلیوٹوتھ کے ذریعے فائل شئرنگ کرنا بھی پسند کرتا ہے اور جی پی ایس کیساتھ نیویگیشن کرکے منزل پہ پہنچنا چاہتا ہے مگر اس سب کے دوران وہ یہ سب جاننابھول جاتا ہے کہ ان تمام عظیم ایجادات و سہولیات کے منظرعام پر آنے میں کس کس موجد کا بنیادی کردار تھا۔

گو ان سب کو ایجاد کرنے میں مدد دینے والے خوبرو چہرے کو یو ایس نیوی نے اتنا کریڈٹ لینے نہیں دیا پھر بھی آج دنیا کو پتا چل گیا ہے کہ Wifi,GPS اور Bluetooth کی ایجادات میں اپنے وقت کی ایک حسینہ ہیڈی لیمر کا بنیادی حصہ شامل ہے گو یہ حسینہ اپنی ہالی وڈ بلاک بسٹر فلموں اور اپنی متنازعہ لائف اسٹوریز جن میں پانچ شادیاں اور طلاقیں تھی کی وجہ سے خبروں میں اِن رہی مگر حال ہی میں اسکی زندگی پر بنی ڈاکومینٹری ‘بومب شیل’ بتاتی ہے کہ وہ فقط ایک خوبرو حسینہ ہی نہیں تھی بلکہ ایک بڑے دماغ کی مالک موجد بھی تھی
بقول جسکے ‘لوگ اپنی Looks سے نہیں نہیں اپنے دماغ سے خوبصورت ہوتے ہیں’۔

جیسا کہ آپکو معلوم ہوگا کہ پہلے وقتوں میں وائرلیس ڈیوائسز کی کمیونیکیشن اتنی محفوظ نا ہوا کرتی مگر ہیڈی کا شکریہ ادا کیجۓ جس نے Frequency Hopping کے عمل پہ چلنے والی اپنی ایک خفیہ ڈیوائس بنائی جو کہ ریڈیو کنٹرول میزائیلوں کو دشمن کو پتا چلاۓ بغیر Secure communication کرکے ٹارگٹ تک پہنچانے میں مدد کرتی تھی،ہیڈی نے یہ ڈیوائس اپنے دوست موجد جارج اینتھل(جوکہ تیز ترین طیارے بنانے کا اعزاز رکھتا ہے اور بقول جارج ہیڈی ایک جنئیس تھی) کیساتھ ملکر ایجاد کی اور پھر یہ یوایس نیوی کو دوسری جنگ عظیم میں استعمال کے واسطے عطیہ کر دی تھی مگر یو ایس نیوی نے ہیڈی کو اس ڈیوائس کے دینے پر اسکا شکریہ ادا کرنے اور کریڈٹ دینے کی بجاۓ اسکو چپ رہنے اور جنگ کے دوران سپاہیوں کا مورال بڑھانے واسطے دورے کرنے کا حکم دیا اور سپاہیوں کو فری کسسز دینے کا کہا۔

(گو بہت سے لوگ کہتے ہیں کہ یہ ہیڈی کی اپنی ایجاد نہیں بلکہ اس نے اسکی ڈایا گرام اپنے سابقہ شوہر جوکہ آسٹریلین اسلحہ ڈیلر تھا کے آفس سے چرائی تھیں مگر پھر بھی انکے پاس کوئی واضح ثبوت نہیں)

فریکونسی ہوپنگ (جوکہ آگے بڑھ کر GPS,Wifi اور Bluetooth کی ایجاد کا محرک بنا) کے Phenomenon کے علاوہ ہیڈی نے ٹریفک سگنل لآئٹس کا بہتر ڈیزائن بھی تجویز کیا اور ایسی گولی بھی بنائی جو کہ سوڈا میں مکس ہوسکتی تھی(یہ ایک ناکام تجربہ گنا جاتا ہے)

گو اسکی زندگی میں دنیا اسکی ان خفیہ ایجادات کو نہیں جان سکی مگر اب دنیا اسکی لائف بائیوگرافی کی مدد سے جان جاۓ گی کہ وہ فقط ایک خوبرو حسینہ ہی نہیں تھی بلکہ وہ ایک عظیم موجد بھی تھی جس نے دنیا کی اس بات کوغلط ثابت کردیا کہ ‘خوبصورت عورت ذہین نہیں ہوسکتی’ بقول ہیڈی
’ایجادات میرے لیے بہت آسان ہیں ان پر مجھے کام نہیں کرنا پڑتا بلکہ یہ میرے ذہن میں خوبخود آجاتیں ہیں۔

تحریر ضیغم قدیر

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *