ابوظبی ایئرپورٹ پر لگائی گئی بڑی شرط ختم ہو گئی

پاکستانیوں کو خوشخبری، ابوظبی ایئرپورٹ پر آج سے آئی سی اے کے انٹری پرمٹ کی شرط ختم ہو گئ

ٰآج ابوظبی ایئرپورٹ پر اُترنے ولے شارجہ، ابوظبی، راس الخیمہ، اُم القوین، فجیرہ اور عجمان کے ویزہ ہولڈرزانٹری پرمٹ کے بغیر ہی مملکت میں داخل ہو سکیں گے
ابوظبی گزشتہ روزابوظبی نے امارات واپسی کے خواہش مند پاکستان سمیت دیگر ممالک کے ویزہ ہولڈرز کویہ خبر سُنائی تھی کہ جو ویزہ ہولڈرز امارات واپس آنا چاہتے ہیں، اور ان کا ویزہ کارآمد ہے،اگر وہ ابوظبی ایئرپورٹ پر اُتریں گے تو ان سے فیدڑل اتھارٹی فار آئیڈنٹٹی اینڈ سٹیزن شپ ( آئی سی اے ) کاخصوصی انٹری پرمٹ طلب نہیں کیا جائے ۔
آج11 اگست سے ابوظبی ایئرپورٹ پر اس اعلان پر عمل درآمد شروع ہو گیا ہے جس کے بعد تمام ممالک کے اماراتی ویزہ ہولڈرز کواس انٹری پرمٹ کے بغیر ہی مملکت میں داخلے کی اجازت ہو گی۔ اماراتی ریاستوں ابوظبی، شارجہ، عجمان، راس الخیمہ، اُم القوین اور فجیرہ کے ویزہ ہولڈرز اس سہولت سے فائدہ اُٹھانے کے مجاز ہوں گے۔ البتہ یہ رعایت دُبئی کے ویزہ ہولڈرز کے لیے دستیاب نہیں ہے۔ پی آئی اے کے ترجمان عبداللہ خان نے بتایا کہ ابوظبی کا سفر کرنے والے پاکستانیوں کو اجازت نامے کے بغیر ہی ٹکٹس جاری کیے جا رہے ہیں۔ ابوظبی کی جانب سے یہ شاندار رعایت دیئے جانے کے بعد پاکستان سے امارات کے لیے پروازوں کی گنتی میں اضافہ ہونے کابھرپور امکان ہے۔پاکستان کی دوسری بڑی ایئر لائنز ایئر بلیو کے کنٹری مینجر عباس رضا ڈار نے اجازت نامے کی شرط ختم کرنے کو ایک شاندار اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے امارات واپسی کے منتظر تارکین کو بڑی سہولت ملے گی۔
انہوں نے امکان ظاہر کیا کہ اجازت نامے کی شرط ختم ہونے کے بعد آئندہ دنوں میں پاکستانیوں کی بڑی گنتی امارات کے لیے ٹکٹس بک کروائے گی۔ یہاں یہ بتاتے چلیں کہ 10 اگست تک امارات واپس آنے والے ویزہ ہولڈرز کے لیے خصوصی اجازت نامہ حاصل کرنا لازمی تھا۔ جن پر سے اب یہ پابندی ختم کر دی گئی ہے، البتہ دُبئی کے ویزہ ہولڈرز کو جنرل ڈائریکٹوریٹ آف ریزیڈنسی اینڈ فارنرز افیئرز (GDRFA) سے اجازت نامہ لینے کی پابندی قائم رہے گی۔ متحدہ عرب امارات کے تمام ایئرپورٹس بشمول ابوظبی ایئرپورٹ پر اُترنے والے تمام مسافروں کے لیے پی سی آر ٹیسٹ کے نیگیٹو رزلٹ کی رپورٹ ہونا بھی لازمی ہے۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *